Poetry In Urdu Text For Mother

 

Urdu text poems do justice to the concept of motherhood, reflecting the associated sentiments that define a mother. So, from this treasure trove of beautiful verses across traditional and contemporary voices alike, there is gratitude expressed toward their mothers and salutations to their role as synonymous caregivers.


It is through the lyrical verses dedicated to mothers that Urdu Intizaar-e-Sukhan pics selflessness, warmth, and guidance very concisely. Each couplet, nay stanza, is a heartful ode to those mothers who are the invincible pillars of strength and compassion in our lives.


The beauty of Urdu poetry lies in its simplicity, which is powerful enough to carry deep emotions. Sacrifice, the act of bearing things, and maternal affection come alive with clarity and sensitivity in the hands of poets, echoing through the emotions of readers.


The digital age has presented an international centre stage for such evergreen expressions of maternal love on the platforms of Urdu literature. In ways, the outreach of such couplets multiplies manifolds through social media as people share and relish the perpetual mark left on their lives by mothers.


Whether it is Mother's Day or just any other day when one thinks about mothers, it can vow poignant homage to the mother. Its evocative language and emotive themes make this art very dear to readers cutting across cultures.


Let this day of beautiful Urdu poetry for mothers be celebrated. Let these couplets fill our hearts with thankfulness and respect towards the women who shaped our lives with their limitless love and unstinted support.


Bring out the spirit of motherhood through Urdu poetry, in which every word resonated with the intense relationship between a mother and child. Come across the feelings and wisdom that have been so intricately wrapped up in such poetic expressions in the glory of mothers.

میری پیاری ماں

ہم اپنی محبت کا اظہار نہیں کرتے

ان کو مسکرا کر دیکھ کر عبادت کر لیتے ہیں


مگر ان سے پیار بھری باتیں نہیں کرتے

یوں تو دل کے ہر گوشے میں وہ ہی بسی ہیں ہمارے


مگر رات کو جب تک ان کا ہاتھ نہ تھام لیں خوابوں سے ملاقات نہیں کرتے

میرے سکوں کا ہر پل میری ماں سے جڑا ہے


میں آج جو کچھ بھی ہوں میری ماں کی دعا ہے

یوں تو دنیا نے متعین کیاہے ماں کے لیےبھی ایک دن


مگر ماں کے لیے میرے جذبات صرف ایک دن کے لیے عیاں ہوا نہیں کرتے

اپنی زندگی کا ہر پل لکھ دیاہے میں نے اپنی ماں کے نام


ہم اپنی ماں کے بغیر زندگی کا تصور کیانہیں کرتے

Poet: آتیقہ By: آتیقہ, Sialkot

ماں 

سروں پہ اپنے بچوں کے ردائیں چھوڑ جاتی ہیں

کہ مائیں مر بھی جائیں تو دعائیں چھوڑ جاتی ہیں

Poet: عابد معروف مغل By: عابد معروف مغل, Rawalpindi 

امی کی یاد میں

امی خوابوں میں میرے کبھی آیا تو کریں

ہاتھ شفقت سے بالوں میں میرے پھرایا تو کریں


یوں تو موجود ھیں آپ ھم سب میں کہیں

صورت اصلی بھی مگر یاد سے اپنی دکھایا تو کریں


اس زمانہ نے بہت پریشان رکھا تنگ کیا آپ کو

اب تو آزاد ھے ۔۔ ملنے کے لئے آیا تو کریں


اب بھی گرتا ھوں راہ میں چلتے چلتے

تب سہارے کے لئے ہاتھ بڑھایا تو کریں


تھک گیا ہوں امی میں حالات سے لڑتے لڑتے

حوصلہ میرا بڑھانے کو بھی آیا تو کریں


عمر بیت رہیں ھے خواہش میں ساتھ رہنے کی

وقت آخر ھے امی کبھی ساتھ تو بتایا کریں


امی خوابوں میں میرے کبھی آیا تو کریں

ہاتھ شفقت سے بالوں میں میرے پھرایا تو کریں

Poet: محمد عمیر عابد By: محمد عمیر عابد, Karachi 

Post a Comment

0 Comments